چیئرمین پی آئی اے کاکہنا ہے کہ بدقسمت طیارے میں 100 افراد سوار تھے ،  لاہور سے کراچی آنیوالے پی آئی اے کے طیارے پی کے 8303  نے لاہور سے ایک بجےاڑان بھری تھی اور دو بج پر پینتالیس منٹ پر کراچی ایئرپورٹ پر لینڈ کرنا تھاتاہم ایئربس 320 کا  لینڈنگ سےایک منٹ قبل رابطہ ٹوٹا۔
تفصیلات کے مطابق پی آئی اے کے طیارہ لاہور سے کراچی آ رہا تھا اور لینڈنگ کی تیاری کر رہا تھا تاہم لینڈنگ سے قبل ایئر پورٹ کے قریب ہی یہ گر کر تباہ ہو گیا ہے ، ادھر نجی ٹی وی چینل 92 نے دعویٰ کیا ہے کہ طیارے میں 80 سے زائد مسافر سوار تھے جبکہ 24 نیوز کے مطابق طیارے میں 95 افراد موجود تھے، طیارہ رہائشی علاقے میں گرا جس کی وجہ سے زمین پر بھی نقصان ہوا تاہم ابھی ہونیوالے نقصان کی تفصیلات سامنے نہیں آسکیں۔ 
ادھر جیو نیوز نےابتدائی طور پر بتایا کہ جہاز کا لینڈنگ کیئر نہیں کھل رہا تھا جس پر کنٹرول ٹاور نے اسے ایک اور چکر لگانے کا کہا  ،کالونی کے اوپر سے ایک اور چکر لگا کر واپس لینڈنگ کرنے جارہا تھا جس دوران یہ گر کر تباہ ہو گیا۔
عینی شاہدین کے مطابق طیارہ گرنے کے بعد آگ لگ گئی اور آخری اطلاعات تک رینجرز اور سول ایوی ایشن کی ٹیمیں موقع پر پہنچ چکی ہیں اور امدادی کارروائیاں شروع کردی گئی ہیں۔

Post a Comment

جدید تر اس سے پرانی