تفصیلات کے مطابق لداخ کے مقام پر بھارت اور چین کے درمیان ہونے والی کشیدگی زور پکڑنے لگی، عالمی میڈیا نے اپنی تازہ ترین رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ لداخ کے مقام پر چین اور بھارت کے فوجیوں کے درمیان جھڑپ ہوئی، جھڑپ کے بعد بھارتی فوج کے 34 فوجی لاپتہ ہو گئے ہیں۔
دوسری جانب بھارت کی سرکاری نیوز ایجنسی اے این آئی نے حکومتی ذرائع کے حوالے سے دعوی کیا ہے کہ لداخ کی وادی گلوان میں چین کے ساتھ جھڑپ میں بھارتی فوج کے کم سے کم 20 فوجی مارے گئے ہیں، جب کہ جھڑپ کے دوران مرنے والوں کی تعداد بڑھنے کا خدشہ بھی ظاہر کیا گیا ہے۔
عالمی میڈیا کا لاپتہ فوجیوں کے حوالے سے دعویٰ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ بھارتی فوج کے لاپتہ ہونے والے 34 فوجیوں کو چینی فوج کی جانب سے یا تو بندی بنا لیا گیا ہے یا سب کو مار دیا گیا ہے۔
دوسری جانب عالمی میڈیا کے مطابق پیر کی رات بھارتی اشتعال انگیزی کے بعد چین نے بھارتی فوج کو منہ توڑ جواب دیتے ہوئے بھارتی فوج کے افسر سمیت 3 بھارتی فوجی ہلاک کر دیئے، جہاں سے چین اور بھارت کی فوجوں کے درمیان جھڑپ کا آغاز ہو گیا جس کا اعتراف بھارت کی جانب سے خود کیا گیا ہے۔
خیال رہے کہ بھارت اور چین کے درمیان لداخ کی سرحد پر 1975 کے بعد پہلی دفعہ اتنی ہلاکت خیز جھڑپیں شروع ہوئی ہیں، جس کے بعد سرحد پر دونوں ملکوں کے درمیان حالات کشیدہ ہوتے ہوئے نظر آرہے ہیں۔

Post a Comment

جدید تر اس سے پرانی