وفاقی کابینہ نے گزشتہ روز پاکستان میں پہلی بار موبائل ڈیوائس مینوفیکچرنگ کی منظوری دے دی۔ اب سے پاکستان میں موبائل فون کی تیاری اور اسمبلنگ پر حکومت کی جانب سے مراعات دی جائیں گی۔
تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز وزیراعظم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کابینہ نے موبائل ڈیوائسز کی پاکستان میں تیاری پر فکسڈ سیلز ٹیکس ختم کر دیا جس کے تحت اب پاکستان میں موبائل فون کی تیاری اور اسملبنگ پر مراعات دی جائیں گی۔ اس نئی پالیسی کی منظوری سے 350 ڈالر تک کی مالیت کے موبائل کی تیاری اور اسمبلنگ پر فکسڈ سیلز ٹیکس ختم ہو گا۔351 سے 500 ڈالر تک مالیت کے موبائل پر فکسڈ انکم ٹیکس 2 ہزار روپے عائد کیا جائے گا۔
جبکہ500 ڈالر سے زائد مالیت کے موبائل کی تیاری پر فکسڈ انکم ٹیکس 6ہزار300 تک بڑھے گا اور درآمدی موبائل کی مس ڈکلیئریشن ختم کرنے کے اقدامات کیے جائیں گے جبکہ مقامی مینوفیکچررز کو موبائل برآمد کیلئے 3 فیصد آر اینڈ ڈی الاؤنس بھی دیا جائے گا۔
پاکستان میں تیار ہونے والے موبائل کی مقامی سطح پر فروخت پر4فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس پر چھوٹ دی جائے گی۔موبائل کی تیاری اور اسمبلنگ کے درمیان فرق وضع کیا جائے گا۔ اور اس ضمن میں ای ڈی بی موبائل فون مینو فیکچرنگ کیلئے سیکرٹریٹ کے فرائض سرانجام دے گا۔

Post a Comment

جدید تر اس سے پرانی