کراچی طیارہ حادثہ، سی اے اے، پی آئی اے، کاک پٹ کریو اور ایئرٹریفک کنٹرولر طیارہ حادثے کا ذمہ دار قرار
تحقیقاتی رپورٹ ایئرکرافٹ ایکسیڈنٹ انویسٹی گیشن بورڈ کے صدر نےوزیر ہوابازی کےحوالے کردی جس میں قومی ایئرلائن ، سول ایوی ایشن اتھارٹی، کاک پٹ کریو اور ایئرٹریفک کنٹرولر کو پی آئی اے طیارہ حادثے کا ذمہ دار قرار دیا گیا۔
رپورٹ میں واضح کیا گیا کہ حادثات کی روک تھام میں پی آئی اے اور سول ایوی ایشن اتھارٹی کا طریقہ کاربھی ناکام ہے، طیارے کے ڈیٹا فلائٹ ریکارڈر، کاک پٹ وائس ریکارڈر سے ملنے والی معلومات رپورٹ میں شامل ہیں جب کہ طیارے کی لاہور سے کراچی پرواز کا ایئرٹریفک کنٹرول سے حاصل ریکارڈ بھی رپورٹ کا حصہ ہے۔
رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لینڈنگ کے وقت طیارے کےکاک پٹ کریو نے ائیرٹریفک کنٹرولر کی ہدایت کو نظر انداز کیا اور ائیرٹریفک کنٹرولربھی اپنی ہدایات پرعمل درآمد کرانےمیں ناکام رہا۔
وزیر ہوا بازی غلام سرور خان نے طیارہ حادثہ کی رپورٹ 22 جون کو پارلیمنٹ اور عوام کے سامنے لانے کا وعدہ کیا تھا۔ گزشتہ ماہ کے اختتام پر اسلام آباد میں میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وزیر ہوا بازی غلام سرور خان نے کہا کہ انکوائری کمیٹی نے سب مواد قبضے میں لے لیا ، تحقیقات جاری ہیں
انہوں نے کہا تھا کہ حادثے کی صاف اور شفاف تحقیقات ہوں گی کوئی عمل دخل نہیں ہو گا ، تحقیقات میں کسی کے ساتھ نرمی نہیں برتی جائے گی۔ تین بار جہاز زمین سے ٹچ ہوا، پھر اس نے جہاز اٹھایا۔ اس کی بھی انکوائری ہو رہی ہے۔

Post a Comment

جدید تر اس سے پرانی